Friday, 24 October 2014

Pin It

Widgets

Jab Tu Qubool Hai Tera Sab Kuch Qubool Hai

Great Love Poetry

پتھر ہے تیرے ہاتھ میں یا کوئی پُھول ہے
جب تُو قبُول ہے ، تیرا سب کچھ قبُول ہے

پھر تُو نے دے دیا ہے نیا فاصلہ مجھے
سر پر ابھی تو پچھلی مسافت کی دھُول ہے

تُو دل پہ بوجھ لے کے ملاقات کو نہ آ
ملنا ہے اس طرح تو بچھڑنا قبُول ہے

تو یار ہے تو اتنی کڑی گفتگو نہ کر
تیرا اصول ہے تو میرا بھی اصول ہے

لفظوں کی آبرو کو گنواؤ نہ یوں عدیم
جو مانتا نہیں ، اُسے کہنا فضُول ہے

یہ وقت وہ ہے جب کہ انا موم ہو چکی
اس وقت کوئی آئے، کوئی بھی، قبُول ہے

آ کے ہنسی لبوں پہ بکھر بھی گئی عدیم
..جانے زیاں ہے یہ کہ خُوشی کا حصُول ہے

Pathar Hai Terey Haath Mein Ya Koi Phool Hai
Jab Tu Qubool Hai , Tera Sab Kuch Qubool Hai

Phir Tu Ne Diya Hai Naya Faasla Mujhey
Sar Par Abhi Tou Pichhli Musafat Ki Dhool Hai

Tu Dil Pe Bojh Lay K Mulaqaat Ko Na Aaa
Is Juram Say Tou Teri Judaai Qubool Hai

Tu Yaar Hai Tou Itni Karri Guftagu Na Kar
Tera Usool Hai Tou Mera Bhi Usool Hai

Lafzon Ki Aabru Ko Youn Gunwao Na Adeem
Jo Maanta Nahi , Ussay Kehna Fuzool Hai

Yeh Waqt Woh Hai Jab Ke’h Anaa Mom Ho Chuki
Is Waqt Koi Aaey , Koi Bhi , Qubool Hai

Aa K Hansi Labon Pay Bikhar Bhi Gai Adeem
Janey Ziyaan Hai Yeh Ke’h Khushi Ka Husool Hai..


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

7 comments:

  1. Loving.........................................................................................................

    ReplyDelete

  2. یہ وقت وہ ہے جب کہ انا موم ہو چکی
    اس وقت کوئی آئے، کوئی بھی، قبُول ہے
    Great

    ReplyDelete

  3. Tu Yaar Hai Tou Itni Karri Guftagu Na Kar
    Tera Usool Hai Tou Mera Bhi Usool Hai

    V Nice

    ReplyDelete

Thanks For Nice Comments.