Thursday, 2 October 2014

Pin It

Widgets

Janay Kissay Mein Chorr K Janay Ki Dhun Mein Hoon

Judai Poetry Collection

ہر لمحہ  ایک اور زمانے کی دُھن میں ہُوں
آیا ہوں جب سے مَیں کہیں جانے کی دُھن میں ہُوں

افسُردگی کا نام نہ دو دوستو اِسے
میں دوسرا چراغ جلانے کی دُھن میں ہُوں

تھک کر گِرا ہوں اَور نہ بیٹھا ہوں ہار کے
مَیں اپنا بَوجھ  آپ اُٹھانے کی دُھن میں ہُوں

چاہے کوئی خزاں زدہ اُس پار ہو نہ ہو
دریا میں چند پھول بہانے کی دُھن میں ہُوں

میرے سوا تو کوئی نہیں  میرے آس پاس
..جانے کِسے مَیں چھوڑ کے جانے کی دُھن میں ہُوں

Har Lamha Aik Aur Zamaney Ki Dhun Mein Hoon
Aaya Hoon Jab Se Mein Kaheen Janay Ki Dhun Mein Hoon

Afsurdagi Ka Naam Na Do Dosto Issay
Mein Doosra Charaagh Jalaney Ki Dhun Mein Hoon

Thak Kar Gira Aur Na Baitha Hoon Haar K
Mein Apna Boojh Aap Uthaney Ki Dhun Mein Hoon

Chahey Koi Khizaan Zada'h Uss Paar Ho Na Ho
Darya Mein Chand Phool Bahaney Ki Dhun Mein Hoon

Merey Siwa Tou Koi Nahi Merey Aas Paas
Janay Kissay Mein Chorr K  Janay Ki Dhun Mein Hoon...


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

4 comments:

Thanks For Nice Comments.