Monday, 24 November 2014

Pin It

Widgets

Guzar Raha Hoon Magar Waqt K Iraday Se

Best Sad Poetry

گزر رہا ہوں مگر وقت کے ارادے سے
مرا وجود بندھا ہے ہوا کے دھاگے سے

کسے پکاروں بھلا کون چل کے آئے گا
یہاں پہ لوگ نظر آئے بھی تو آدھے سے

میں اِس جگہ سے کہیں اور جا نہیں سکتا
بندھا ہوا ہوں مکمل کسی کے وعدے سے

یہ چاند ٹوٹ کے قدموں میں کیوں نہیں گرتا
یہ کھینچتا ہے مجھے چاندنی کی دھاگے سے

تغیرات کی دنیا ترا قصور ہی کیا
....ترا وجود جو ممکن ہوا ارادے سے

Guzar Raha Hoon Magar Waqt K Iraday Se
Mera Wujood Bandha Hai Hawa K Dhagay Se

Kisay Pukaroon Bhala Kon Chal K Aaega
Yahan Par Log Nazar Aaey Bhi Tou Aadhey Se

Mein Iss Jagha Se Kaheen Aur Ja Nahi Sakta
Bnadha Hua Hoon Mukammal Kisi K Waday Se

Yeh Chaand Toot K Qadmon Mein Q Nahi Girta
Yeh Kheenchta Hai Mujhe Chaandni K Dhagay Se

Tagayyuraat Ki Dunya Tera Qusoor He Kia 
Tera Wujood Jo Mumkin Hua Iraday Se......



Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

4 comments:

Thanks For Nice Comments.