Wednesday, 3 December 2014

Pin It

Widgets

December Aansoun Mein Beh Gaya Hai

Best December Poetry

کوئی جذبہ ادھورا رہ گیا ہے
دسمبرآنسوئوں میں بہہ گیا ہے

یہ دل خاموش ہو کر رہ گیا ہے
نا جانے آج وہ کیا کہہ گیا ہے

یہ آنکھیں ہیں ہماری کتنی گہری
سمندر میں سمندر بہہ گیا یے

تمہارے ساتھ وابستہ تھا سب کچھ
سواَےَ یاد کے کیا رہ گیا ہے

پلٹ کر دیکھنے پر ہم نے جانا
دل نادان کیا کیا سہہ گیا ہے

بہت بھیڑ ہے بازاروں میں لیکن

 ......تیرا ارشد اکیلا رہ گیا ہے
Koi Jazba Adhoora Reh Gaya Hai
December Aansoun Mein Beh Gaya Hai

Yeh Dil Khamosh Ho Kar Reh Gaya Hai
Na Janey Aaj Woh Kia Keh Gaya Hai

Yeh Aankhein Hein Hamari Kitni Gehri
Samandar Mein Samandar Beh Gaya Hai

Tumhare Sath Wabasta Tha Sab Kuch.
Siwaey Yaad K  Kia Reh Gaya Hai

Palat Kar Dekhney Par Hum Ne Jana
Dil-E-Nadaan Kia Kia Seh Gaya Hai

Bohat Bheerr Hai Bazaron Mein Lekin
Tera Arshad Akela Reh Gaya Hai .....


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

7 comments:

Thanks For Nice Comments.