Monday, 22 December 2014

Pin It

Widgets

Khuwab Hai Ya Saraab Hai Koi

Best Khuwab Poetry

خواب ہے یا سراب ہے کوئی
یا سراپا حجاب ہے کوئی

زندگی یوں گزار دی ہم نے
اک مسلسل عذاب ہے کوئی

روز لڑتے ہیں ہم ستاروں سے
کچھ پرانا حساب ہے کوئی

جنوری کی اداس شاموں میں
لطف ہی لاجواب ہے کوئی

اُس کو دِل سے لگائے بیٹھے ہیں
وہ مقدس کتاب ہے کوئی

عشق نہ ہو تو حُسن پھیکا ہے
گویا نقلی گلاب ہے کوئی

نہ یہ بستا ہے نہ اجڑتا ہے
دل ہی خانہ خراب ہے کوئی

ہمسفر اب تو آ کے مل جاؤ
....کتنا پُر اضطراب ہے کوئی

Khuwab Hai Ya Saraab Hai Koi
Ya Sarapa Hijaab Hai Koi

Zindagi Youn Guzaar Di Hum Ne
Ik Musalsal Azaab Hai Koi

Roz Larrtey Hein Hum Sitaron Se
Kuch Purana Hisaab Hai Koi

January Ki Udaas Shaamo Mein
Lutf He Lajawaab Hai Koi

Usko Dil Se Lagaey Baithay Hein
Woh Muqaddas Kitaab Hai Koi

Ishq Na Ho Tou Husn Pheeka Hai
Goya Naqli Gulaab Hai Koi

Na Yeh Basta Hai Na Ujarrta Hai
Dil He Khana Kharaab Hai Koi

Humsafar Ab Tou Aa K Mil Jaao
Kitna Pur Iztaraab Hai Koi....


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 
Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

5 comments:

Thanks For Nice Comments.