Thursday, 18 December 2014

Pin It

Widgets

Teri Diwaar Se Oonchi Meri Diwaar Banay

Best Urdu Ghazal

دل فروشوں کے لیے کوچہ و بازار بنے
اور جانبازوں کی خاطر رسن و دار بنے

بس یہی دوڑ ہے اس دور کے انسانوں کی
تیری دیوار سے اونچی مری دیوار بنے

چھین کر غیر سے اپنوں نے مجھے قتل کیا
آپ ہی ڈھال بنے ،آپ ہی تلوار بنے

ہوگئے لوگ  اپاہچ  یہی کہتے کہتے
ابھی چلتے ہیں ذرا راہ تو ہموار بنے

مجھ کو ممنون کرم کرکے وہ فرماتے ہیں
آدمی سوچ سمجھ کر ذرا خود دار بنے

خود شناسی کے نہ ہونے سے یہی ہوتا ہے
جن کو فن کار نہ بننا تھا وہ فن کار بنے

تجھ سے کتنا ہے ہمیں پیار کچھ اندازہ کر
ہم ترے چاہنے والوں کے روادار بنے

شان و شوکت کے لیے تو ہے پریشان حفیظ
...اور میری یہ تمنا ترا  کردار  بنے
Dil Faroshon K Liye Koocha-O-Bazaar Banay
Aur Janbazo Ki Khatir Rasn-O-Daar Banay

Bus Yehi Dorr Hai Iss Dor K Insano Ki
Teri Diwaar Se Oonchi Meri Diwaar Banay

Chheen Kar Gair Se Apno Ne Mujhe Qatal Kia
Aap He Dhaal Banay , Aap He Talwaar Banay

Ho Gaey Log Apahaj Yehi Kehtey Kehtey
Abhi Chalte Hein Zara Raah Tou Hamwar Banay

Mujko Mamnoon-E-Karam Kar K Woh Farmate Hein
Aadmi Soch Samjh Kar Zara Khud-Daar Banay

Khud Shanasi K Na Honey Se Yehi Hota Hai
Jinko Funkaar Na Banna Tha Woh Funkaar Banay

Tujhse Kitna Hai Hamein Piyar Kuch Andaza Kar
Hum Terey Chahney Walon K Rawa-Daar Banay

Shan-O-Shokat K Liye Tou Hai Pareshan Hafeez
Aur Meri Yeh Tamanna  Tera Kirdaar Banay...


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It

Get Free Updates in your Inbox
Follow us on:
facebook twitter gplus pinterest rss

4 comments:

Thanks For Nice Comments.