Iss Dharti K Sheesh Naag Ka Dunk Barra Zehreela Hai

Urdu Sad Ghazals

اس دھرتی کے شیش ناگ کا ڈنک بڑا زہریلا ہے
 صدیاں گزریں ، آسماں کا رنگ ابھی تک نیلا ہے

 میں ہوں اپنے پیار پہ قائم اُن کی رسمیں وہ جانیں
 اور ہے ذات حسینوں کی اور میرا اور قبیلہ ہے

 میرے اُس کے ہونٹ ہلیں تو کھِلیں ہزاروں پھول مگر
 کچھ تو میں چُپ رہتا ہوں، کچھ یار مرا شرمیلا ہے

 آنسو ٹپکے ہوں گے اِن پر حرف جبھی تو پھیل گئے
 رویا ہے خط لکھنے والا، جبھی تو کاغذ گیلا ہے

 میں نے کہا دو اجنبیوں کے دل کیسے مِل جاتے ہیں
پیار سے بولی اِک دیوی یہ سب بھگوان کی لِیلا ہے

 یوں ہی تو نہیں کہتا رہتا نظمیں، غزلیں، گیت قتیلؔ
 ..یہ تو کسی کی محفل تک جانے کا ایک وسیلہ ہے
Iss Dharti K Sheesh Naag Ka Dunk Barra Zehreela Hai
Sadiyaan Guzri, Aasman Ka Rung Abhi Tak Neela Hai

Mein Hoon Apne Piyar Pe Qayam Unki Rasmein Woh Jane
Aur Hai Zaat Haseeno Ki Mera Aur Qabeela Hai

Merey USS K Hont Hilen Tou Khilein Hazaron Phool Magar
Kuch To Mein Chup Rehta Hoon,Kuch Yar Mera Sharmila Hai

Aansoo Tapke Honge In Par, Harf Jabhi Tou Phail Gaey
Roya Hai Khat Likhney Wala, Jabhi Tou Kagaz Geela Hai

Mein Ne Kaha Dou Ajnabiyon K Dil Kesey Mil Jatey Hein
Piyar Se Boli Ik Devi Yeh Sab Bhagwaan Ki Leela Hai

Youn He Tou Nahi Kehta Rehta Nazmein,Ghazlein,Geet Qateel
 Yeh Tou Kisi Ki Mehfil Tak Jaaney Ka Aik Waseela Hai...


Please Do Click g+1 Button If You Liked The Post  & Share It 

Comments

Post a Comment

Thanks For Nice Comments.